Altaf Hussain  English News  Urdu News  Sindhi News  Photo Gallery
 
 Events  Blogs  Fikri Nishist  Study Circle  Songs  Videos Gallery
 Manifesto 2013  Philosophy  Poetry  Online Units  Media Corner  RAIDS/ARRESTS
 About MQM  Social Media  Pakistan Maps  Education  Links  Poll
 Web TV  Feedback  KKF  Contact Us        

کراچی سے سکھر تک ہرشہرکی دیواریں پکار پکار کر کہہ رہی ہیں کہ سندھ بھر کے عوام آج بھی الطاف حسین کے ساتھ ہیں۔ الطاف حسین


 کراچی سے سکھر تک ہرشہرکی دیواریں پکار پکار کر کہہ رہی ہیں کہ سندھ بھر کے عوام آج بھی الطاف حسین کے ساتھ ہیں۔ الطاف حسین
 Posted on: 11/24/2021

کراچی سے سکھر تک ہرشہرکی دیواریں پکار پکار کر کہہ رہی ہیں کہ سندھ بھر
کے عوام آج بھی الطاف حسین کے ساتھ ہیں۔ الطاف حسین
 جو لوگ اپنی قوم کے حقوق اور شہدا کوبھول جایاکرتے ہیں ان میں غداری کے جراثیم پیدا ہونافطری عمل ہے۔ الطاف حسین
 غربت کسی بھی فرد کے ایمانداراوربے ایمان ہونے کاپیمانہ نہیں ہوتی بلکہ کسی کوبھی پرکھنے اورجانچنے کا سب سے بڑاپیمانہ وقت ہوتاہے
 تحریک کا ہرشخص بدل سکتاہے لیکن نظریہ دینے والاکبھی نظریہ سے انحراف نہیں کرسکتا
 عوام نے تمام ضمیرفروشوںکوآزمالیا، سب کے وعدے اوردعوے اورگھناؤناعمل وکردار دیکھ لیا اوروہ آج طرح طرح سے اپنی وفاداری اورالطاف حسین سے
 وابستگی کااظہارکررہے ہیں۔ الطاف حسین
حیدرآباد کل بھی الطاف حسین کے چاہنے والوںکاشہرتھا اورآج بھی ہے اورکوئی بھی ظلم ان کے دلوںسے الطاف حسین کی محبت کونہیں نکال سکا
سارے لوگ خراب نہیں ہوتے ،اگر ایسا ہو تا تو کراچی سے سکھر تک ایم کیوایم کے پرانے کارکنان اوران کی نئی نسل الطاف حسین کی چاہنے والی نہ ہوتی
غداروں نے فوج کے ہاتھوں اپناسوداکرکے صرف تحریک کوہی کمزورنہیں کیا بلکہ
 قوم کے وقارکوبھی ملیامیٹ کردیااور قوم کو غلامی کی جانب دھکیل دیا
مہاجرعوام پر ظلم حد سے بڑھ چکا ہے ، الطاف حسین کے چاہنے والوں نے فیصلہ کرلیاہے کہ ہم غلامی اور ذلت کی زندگی کسی بھی قیمت پر قبول نہیں کریں گے
 آج قوم کے ہرفردکوسوچنا ہوگا کہ اسے اپنی ماؤںبہنوں،بیٹیوں کی عزتوںکے تحفظ اورآنے والی نسلوں کی باعزت زندگی اوربہترمستقبل کے لئے کیاکرناہے
 مجھے اپنے ان عظیم ساتھیوںپر ناز ہے جوتمام ترریاستی جبرکے باوجود آج بھی
 اپنے الطاف بھائی کے ساتھ ہیں
 حیدرآباد میں ایم کیوایم کے وفاپرست کارکنوں سے خطاب
 22  اگست 2016ء کے بعد حیدرآباد میں ایم کیوایم کے کارکنوںسے جناب الطاف حسین کاپہلا خطاب

 لندن  …  24  نومبر 2021ئ
ایم کیوایم کے بانی وقائدجناب الطاف حسین نے کہاہے کہ ریاستی جبرکے باعث کراچی سے کشمورتک عوام کی اکثریت خاموش ضرور ہے لیکن آج کراچی سے سکھر تک ہرشہرکی دیواریں پکار پکار کر کہہ رہی ہیںکہ سندھ بھرکے عوام کی خاموش اکثریت آج بھی الطاف حسین کے ساتھ ہے اوراب ان کے صبر کاپیمانہ لبریز ہورہا ہے۔
انہوں نے یہ بات حیدرآباد میں ایم کیوایم کے وفاپرست کارکنوںسے خطاب کرتے ہوئے کہی۔ یہ 22  اگست 2016ء کے بعد حیدرآباد میں ایم کیوایم کے کارکنوںسے جناب الطاف حسین کاپہلا خطاب تھا، جناب الطاف حسین نے کہاکہ ہماری تحریک کی جدوجہد میں اچھے دن کم ہی آئے، ہم مسلسل ریاستی جبروستم کاسامناکرتے رہے اسلئے کہ ہماری تحریک نے غریب ومتوسط طبقہ سے جنم لیا، جوملک میں رائج فرسودہ جاگیردارانہ وڈیرانہ اوربے لگام سرمایہ دارانہ نظام کاخاتمہ چاہتی تھی اورجس کامنشوراورفکروفلسفہ ملک میں رائج نظام سے میل نہیں کھاتاتھا، جس نے غریب ومتوسط طبقے کے حقوق کی صرف بات ہی نہیں کی بلکہ غریب ومتوسط طبقہ کے تعلیم یافتہ اورباصلاحیت نوجوانوںکو قومی وصوبائی اسمبلیوں اور سینیٹ کے ایوانوں میں بھیجا، بدقسمتی سے ہم نے جنہیں ایوانوںمیں بھیجاوہ جاگیردارانہ نظام کے خلاف جدوجہد کرنے کے بجائے عوام کے مسائل بھول کر اسی فرسودہ کرپٹ نظام کاحصہ بن گئے، وہ کل تک چھوٹے چھوٹے مکانات میں رہنے والے تھے لیکن آج ان کے ڈیفنس، کلفٹن اوران جیسے علاقوں میں بنگلے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ جو لوگ اپنی قوم کے حقوق اور شہدا کوبھول جایاکرتے ہیں ان میں غداری کے جراثیم پیدا ہونافطری عمل ہے۔انہوںنے کہاکہ غربت کسی بھی فرد کے ایمانداراوربے ایمان ہونے کاپیمانہ نہیں ہوتی بلکہ کسی کوبھی پرکھنے اورجانچنے کا سب سے بڑاپیمانہ وقت ہوتاہے۔آزمائش کاوقت آیا تو لوگ اپنے مفادات کے تحت بدل گئے لیکن الطاف حسین نہ کل بدلاتھا، نہ آج بدلا ہے اورنہ مرتے دم تک بدلے گا۔ انہوں نے کہاکہ تحریک کا ہرشخص بدل سکتاہے لیکن نظریہ دینے والاکبھی اپنے نظریہ سے انحراف نہیں کرسکتا۔ 
جناب الطاف حسین نے کہاکہ19جون 1992ء کوفوج حقیقی کولے کرآئی کراچی ، حیدرآباد اورسندھ بھر میں ایم کیوایم کے کارکنوںاورالطاف حسین کے چاہنے والوںپر ظلم کے پہاڑتوڑے گئے لیکن عوام وکارکنان کوالطاف حسین سے دورنہیں کیا جاسکا۔حیدرآباد کے غیورعوام نے ثابت کیاکہ وہ الطاف حسین کے ساتھ ہیں۔فوج  نے ایم کیوایم کوختم کرنے کے لئے پی ایس پی بنائی، پی آئی بی اوربہادرآباد ٹولہ بنایا ریاستی جبرکے ذریعے کارکنان وعوام کی وفاداریاں تبدیل کرانے کی کوششیں کی جاتی رہیں، فوج نے سب کچھ کرکے دیکھ لیالیکن کراچی کی طرح حیدرآباد کے وفاپرست ساتھی، مائیں، بہنیں اوربزرگ بھی ضمیرفروشوں کے ساتھ نہیںگئے ، انہوں نے تمام ضمیرفروشوںکوآزمالیا، سب کے وعدے اوردعوے اورگھناؤناعمل وکردار دیکھ لیا اور آج وہ طرح طرح سے اپنی وفاداری اورالطاف حسین سے وابستگی کااظہارکررہے ہیں اوردنیاکوبتارہے ہیں کہ حیدرآباد کل بھی الطاف حسین کے چاہنے والوںکاشہرتھا اورآج بھی ہے اورکوئی بھی ظلم ان کے دلوںسے الطاف حسین کی محبت کونہیں نکال سکا۔ انہوں نے کہاکہ حیدرآباد کے وفاپرست کارکنان وعوام نے متعددبارثابت کیاکہ حیدرآباد الطاف حسین کاشہرتھااورآج بھی حیدرآباد پوسٹرز اوروال چاکنگ میںدیگرشہروںسے بازی لے گیا۔ 
جناب الطاف حسین نے کہاکہ چند لوگ ضرور حالات کے جبریااپنے مفادات کے تحت ضرور بدل جاتے ہیں لیکن سارے لوگ خراب نہیں ہوتے ،اگر ایسا ہو تا تو کراچی سے سکھر تک ایم کیوایم کے پرانے کارکنان اوران کی نئی نسل ایم کیوایم اور الطاف حسین کی چاہنے والی نہ ہوتی اورآج تک الطاف حسین سے جڑی ہوئی نہ ہوتی اوروہ آج ضمیرفروشوں کے ساتھ ہوتی۔ جناب الطاف حسین نے کہاکہ ریاستی جبرکے باعث کراچی سے کشمورتک عوام کی اکثریت خاموش ضرور ہے لیکن آج کراچی سے حیدرآباد اورحیدرآباد سے سکھر تک ہرشہرکی دیواریں پکار پکار کر کہہ رہی ہیںکہ سندھ بھرکے عوام کی خاموش اکثریت آج بھی الطاف حسین کے ساتھ ہے اوراب ان کے صبر کاپیمانہ لبریز ہورہا ہے۔ انہوںنے مزیدکہاکہ ہرچیز کی ایک حد ہوتی ہے، انسان کے برداشت کی بھی ایک حد ہوتی ہے ، مہاجرعوام پر ظلم حد سے بڑھ چکا ہے ، الطاف حسین کے چاہنے والوں نے فیصلہ کرلیاہے کہ ہم غلامی اور ذلت کی زندگی کسی بھی قیمت پر قبول نہیں کریں گے۔جناب الطاف حسین نے کہاکہ کوئی بھی چیز ناممکن نہیںہوتی،اگر انسان کواپنے نظریہ پرکامل ایمان ہو، ارادہ پختہ ہو، یقین محکم ہوتو اللہ تعالیٰ بھی انسان کوکامیابی عطاکرتا ہے۔ 
جناب الطاف حسین نے کہاکہ میں نے اپنی جدوجہد کے ذریعے کراچی حیدرآباد میں وہ ماحول قائم کردیاتھاکہ ہماری مائیںبہنیںبیٹیاںخود کومحفوظ تصورکرنے لگی تھیں لیکن غداروںنے فوج کے ہاتھوں اپناسوداکرکے صرف تحریک کوہی کمزورنہیں کیا بلکہ قوم کے وقارکوبھی ملیامیٹ کردیااور قوم کو غلامی کی جانب دھکیل دیا۔ انہوں نے کہاکہ آج قوم کے ہرفردکوسوچنا ہوگا کہ اسے اپنی ماؤںبہنوں،بیٹیوں کی عزتوںکے تحفظ اورآنے والی نسلوں کی باعزت زندگی اوربہترمستقبل کے لئے کیاکرناہے۔ 
جناب الطاف حسین نے حیدرآبادکے کارکنان کوخراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہاکہ مجھے اپنے ان عظیم ساتھیوںپر ناز ہے جوتمام ترریاستی جبرکے باوجود ادھر ادھر نہیں گئے اورآج بھی اپنے الطاف بھائی کے ساتھ ہیں۔ انہوں نے کارکنوں سے کہاکہ وہ حیدرآباد کی تمام ماؤںبہنوںکوبھی میراسلام پہنچائیں، اپناخیال رکھیںاورثابت قدمی سے جدوجہد جاری رکھیں۔ اس موقع پر حیدرآباد کے کارکنوں نے بھی جناب الطاف حسین سے اپنی والہانہ محبت وعقیدت کااظہارکیا۔ 

 ٭٭٭٭٭



12/9/2021 1:19:04 AM